اسلام آباد میں 49ویں قومی مینز اینڈ وومنز اتھلیٹکس چیمپین شپ کے انعقاد کا اعلان کر دیا ، پنجاب حکومت کی عدم دلچسپی کے باعث چیمپین شپ لاہور سے اسلام آباد منتقل

اسلام آباد (سپورٹس ورلڈ نیوز) پاکستان اتھلیٹکس فیڈریشن نے16سے18نومبر تک پاکستان سپورٹس کمپلیکس اسلام آباد میں 49ویں قومی مینز اینڈ وومنز اتھلیٹکس چیمپین شپ کے انعقاد کا اعلان کر دیا ہے ۔پاکستان اتھلیٹکس فیڈریشن کے ذرائع کے مطابق قومی اتھلیٹکس چیمپین شپ میں اے ایف پی سے منسلک تمام یونٹس جن میں پاکستان آرمی،واپڈا،نیوی،ائیرفورس،ایچ ای سی ،ریلوے،پنجاب ،سندھ،کے پی کے،بلوچستان،فاٹا،اے جے کے ،گلگت بلتستان اور میزبان اسلام آباد سے تعلق رکھنے والے 500سے زائد اتھلیٹس شرکت کریں گے۔ انہوں نے مذید بتایا کہ چیمپین شپ میں مردوں کے 23اور خواتین کے 21ایونٹس منعقد کئے جائیں گے۔ ایک سوال کے جواب میں اے ایف پی کے زمہ دار ذرائع نے بتایاکہ اس ایونٹ کو لاہور سے اسلام آباد منتقل کرنے کا فیصلہ پنجاب حکومت کی عدم دلچسپی کی وجہ سے کیا گیا ہے وگرنہ اے ایف پی چاہتی تھی کہ نشتر پارک لاہور میں بچھائے جانے والے نئے ٹارٹن ٹریک پر ہی یہ ایونٹ ہو ۔لیکن پنجاب اتھلیٹکس ایسوسی ایشن اور اے ایف پی کی کوششوں کے باوجود پنجاب کی وزارت کھیل کی عدم دلچسپی کے باعث ہمیں ایونٹ کو اسلام آباد منتقل کرنا پڑا۔ایک سوال کے جواب میں کیہ پنجاب حکومت کیوں نہیں چاہتی تھی کہ یہ ایونٹ پنجاب میں ہو جبکہ اس سے قبل بلوچستان اور سندھ جیسے کھیلوں کے حوالے سے پسماندہ صوبے اس ایونٹ کو ہوسٹ کر چکے ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ تو آپ کو پنجاب کی وزارت کھیل سے پوچھنا چاہیے۔ہوسکتا ہے کہ عالمی سطح پر پاکستان کے لئے سب سے زیادہ میڈلز لانے والا کھیل اتھلیٹکس انہیں پسند نہ ہو یا پھر انہیں پتہ ہی نہ ہو کہ پاکستان کی اتھلیٹکس میں کیا سٹینڈنگ ہے۔