انچاسویں قومی اتھلیٹکس چیمپین شپ کل سے اسلام آباد میں شروع ہوگی ،افتتاح شہریار آفریدی کریں گے۔ ملک بھر سے600کے قریب اتھلیٹ شریک ہون گے: جنرل(ر) اکرم ساہی

اسلام آباد (سپورٹس ورلڈ نیوز) پاکستان اتھلیٹکس فیڈریشن کے زیر اہتمام 49ویں قومی مینز اور وومنز اتھلیٹکس چیمپین شپ کل سولہ نومبر سے جناح سپورٹس کمپلیکس پاکستان سپورٹس بورڈ اسلام آباد میں شروع ہوگی جسکا افتتاح وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی کریں گے چیمپین شپ اٹھارہ نومبر تک جاری رہے گی جسمیں پاکستان اتھلیٹکس فیڈریشن سے ملحقہ تمام یونٹس کے 600کے قریب مرد و خواتین کھلاڑی شرکت کریں گے . یہ بات پاکستان اتھلیٹکس فیڈریشن کے سر براہ جنرل(ر) اکرم ساہی نے آج سیکر ٹری اے ایف پی محمد ظفر اور صدر آئی اے اے کے صدر بریگیڈئر (ر) سلطان ستی کے ہمراہ یہاں پی ایس بی میڈیا سینٹر اسلام آباد میں ایک پر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بتائی ۔انہوں نے بتایا کہ ایونٹ کی تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں اور تما م ٹیمیں اسلام آباد پہنچ گئی ہیں جو تین روز تک جاری رہنے والے ا ن مقابلوں میں مردوں کے 23 خواتین کے21ایونٹ میں کل ملا کر44 میڈلز کی جنگ لڑیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ پی اے ایف کے زیر اہتمام ہونے والی اس چیمپین شپ کے تینوں دن مختلیف اہمشخصیات مہمان خصوصی ہونگیں جہاں افتتاح شہر یار آفریدی کریں گے تو دوسرے روز کے مہمان خصوصی کے پی کے کے سینئر وزیر و وزیر کھیل عاطف خان ہوں گے جبکہ تیسرے اور آخری دن اختتامی تقریب کے مہمان خصوصی نعیم الحق پولیٹکل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان ہو نگے۔جنرل (ر) اکرم ساہی نے مذید بتایا کہ ہم نے گراس روٹ لیول سے اتھلیٹکس کو فروغ دینے کے لئے سکولوں کو براہ راست پلئینگ رائیٹس دینے اورآئندہ سے زیادہ سے زیادہ بچوں کو صوبائی اور قومی سطح پر جونئیر چیمپین شپس میں شرکت کا موقع دینے کے لئے اپنے اپنے سکول کے پلیٹ فارم سے براہ راست شرکت کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس اقدام سے جہاں ایک طرف صوبائی اور قومی سطح پر ہونے والے جونئیر ایونٹس میں بچوں کی شرکت بڑھے گی وہیں مقابلہ کے معیار میں بھی بہتری آئے گی۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ اے ایف پی نے آئندہ قومی ایونٹ سے بیسٹ میل و فی میل اتھلیٹ ، بیسٹ کوچ بیسٹ مینجر کے لئے ایوارڈ رکھنے کا فیصلہ کیا ہے اس ضمن میں نے اپنے ساتھیوں سے اس حوالے سے طریقہ کار طے کرنے کا کہا ہے۔ انشاء اللہ آئندہ برس سے اس کا کرائیٹریا بنا کر ان ایوارڈز کا اجراء کر دیا جائے گا۔اس بار ہم نے یہ ایوارڈ اسلام آباد اتھلیٹکس ایسوسی ایشن کو دینے فیصلہ کیا ہے۔ جسکے سر براہ بریگیڈئر (ر) سلطان ستی نے دن رات محنت کر کے دو ماہ کے اندر قومی سطح کے دو ایونٹس کی میزبانی کی ہے۔ انہوں نے اس موقع پر ایک سوال کے جواب میں بتایا کہپاکستان اتھلیٹکس فیڈریشن کے زیر اہتمام ہونے والے اس ایونٹ پر چالیس سے پنتالیس لاکھ روپے کا بجٹ خرچ ہوگا جو سب ہم اپنے سورسز سے حاصل کر اور خرچ رہے ہیں ۔چیمپین شپ کے لاہور سے اسلام آباد شفٹ کئے جانے کے حوالے سے اس سوال پر کہ کیا پنجاب حکومت نے جان بوجھ کر کسی کے کہنے پر اسے اپنے ہاں نہیں ہونے دیا ؟ جنرل (ر) اکرم ساہی کا کہنا تھا وہ یہ تو نہیں جانتے کہ ایسا کیوں کیا گیا انہوں نے کہا کہ وہ کھیوں کی سیاست سے پرے اپنے کھیل کے فروٍ غ کے لئے کام کر رہے ہیں اور یہی کرنا چاہتے ہیں ،اگر کوےی سیاست کر رہا ہے تو وہ جانے اور اسکا کام۔ انہوں نے کہا کہ البتہ پنجاب حکومت نے اس ایونٹ کو کرانے کے لئے ہم سے وعدہ کر رکھا تھا کیونکہ بلوچستان اور سندھ کے بعد روٹشن کے اصول کے تحت ویسے بھی اس ایونٹ کو پنجاب ہی نے ہوسٹ کرنا تھا اور ماضی میں ہمیں کہا گیا تھا کہ پنجاب حکومت لاہور میں بننے والے نئے ٹریک کا افتتاح قومی سطح کے ایونٹ سے کر نا چاہتی ہے ۔ مگر جب ایونٹ کا وقت قریب آیا تو عین آخری وقت پنجاب کی وزارت کھیل نے اس ایونٹ کے حوالے سے ہاتھ کھینچ لیا جس سے ہمیں بھی شدید حیرت اور افسوس کا جھٹکا لگا، کیونکہ ہم ایونٹ کا اعلان کر چکے تھے ہم اپنے کہے سے نہیں پھر سکتے تھے چنانچہ ہم نے اپنا وینیو تبدیل کیا اور اسے اسلام آباد لے آئے۔ انہوں نے کہا ایکدم سے اتنے بڑے بجٹ کاایونٹ کرانا ہمارے لئے بھی امتحان تھا،لیکن اللہ کا شکر ہے کہ ہم سر خرو ہوئے اور یہ سب میری ٹیم بلحصوص بریگیڈئر (ر) سلطان ستی اور دیگر ساتھیوں کی مشترکہ محنت کا نتیجہ ہے۔جس پر وہ اپنے سبھی ساتھیوں کے شکر گُذار ہیں۔