ایف آئی اے اور نیب کے بعد وزیر اعظم معائنہ کمیشن نے بھی پاکستان سپورٹس بورڈ میں جاری کرپشن کا نوٹس لے لیا ۔حکام ریکارڈ سمیت نو جنوری کو طلب کر لئے گئے

اسلام آباد (سپورٹس ورلڈ نیوز) ایف آئی اے اور نیب کے بعد وزیر اعظم معائنہ کمیشن نے وزیر اعظم پاکستا ن عمران خان کے آفس کی ہدایت پر پاکستان سپورٹس بورڈ میں گذشتہ چار سال سے جاری کرپشن کی نہ رکنے والے سلسلہ کا نوٹس لیتے ہوئے پی ایس بی حکام کو نو جنوری کو تحقیقات کے لئے طلب کر لیاہے ۔ پی ایس بی کے ذمہ دار ذرائع کے مطابق وزیر اعظم پاکستان معائنہ کمیشن کی جانب سے پی ایس بی کو موصول ہونے والے ایک خط میں ہدایت کی گئی ہے کہ وہ اپنے ادارہ کی ورکنگ۔ اسکی قانونی ذمہ داریوں۔پاکستان میں کھیلوں کی تباہی کی وجوہات ۔ ناروال سپورٹس سٹی کمپلیکس کرپشن کیس اوراپنے ادارہ کے خلاف مختلیف تحقیقاتی اداروں میں زیر تفتیش کیسوں جن میں لیاقت جمنازیم چھت کرپشن کیس۔ باونڈری وال کرپشن کیس۔گیلانی جم کرپشن کیس۔ قائد اعظم گیمز کرپشن کیس ۔ ایشین ان ڈور گیمز۔ گوہاٹی گیمز 2016 اورایشن گیمز 2018کرپشن کیس ۔ سمیت پی ایس حکام کے سابقہ ادوار میں غیر ملکی دوروں کے حوالے سے مکمل تفصیلات کے ساتھ وزیر اعظم معائنہ کمیشن کے سامنے پیش ہوں۔ پی ایس بی ذرائع کے مطابق ایف آئی اے اور نیب کے بعد ایک اور ادارہ کی جانب سے جواب طلبی کو لیکر پی ایس بی کے موجدہ ٹرائیکا مافیا جس میں تین ڈی ڈی جی ڈی ڈی جی ایڈمن۔ ایکٹنگ ڈی ڈی جی فنانس اور ڈی ڈی جی ٹیکنیکل جو بیک وقت پی ایس میں چار پوسٹوں پر قبضہ جمائے بیٹھے اور اب ریاض حسین پیرزادہ کی چھپر چھایہ سے نکل کر آئی پی سی منسٹر فہمیدہ مرزا کے نام کے پیچھے چھپ کر اپنی وارداتوں میں لگے ہوئے ہیں کی سٹی گم ہوگئی ہے۔