جنوبی افریقی کرکٹ بورڈ کیلئے تیسرے ٹیسٹ کی وکٹ کی تیاری چیلنج بن گیا وکٹ میعاری نہ ہوئی تو سٹیڈ یم پر 4سال کی پابندی لگ جائے گی ، حکام پریشان

جوہانسبرگ( سپورٹس ورلڈ نیوز) پاکستان کے خلاف تیسرے ٹیسٹ سے قبل ہی جنوبی افریقی کرکٹ بورڈ کی نیندیں حرام ہوگئیں ، پروٹیز کرکٹ بورڈ کے لیے وانڈرز وکٹ کی تیاری چیلنج بن گیا، پچ اس وقت انٹر نیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی ) کی واچ لسٹ پر ہے۔ قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ مکی آرتھر کی جانب سے تنقید کے بعد جوہانسبرگ پچ کی تیاری پر سب کی نظریں لگ گئی ہیں ، پاکستانی ٹیم انتظامیہ نے کیپ ٹاؤن اور سنچورین ٹیسٹ کی وکٹ کو اوسط قرار دیا تھا جس کے بعد جنوبی افریقی کرکٹ حکام کی نیندیں حرام ہوگئی ہیں اور پروٹیز کیوریٹرز کے لیے وانڈرز وکٹ کی تیاری چیلنج بن گیا ہے۔ذرائع کے مطابق قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد اور ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے وانڈرز پچ کا بغور جائزہ لیا جب کہ ایک ٹیسٹ میچ کی پابندی کا شکار پروٹیز کپتان فاف ڈوپلیسی کو بھی کیوریٹرز کی جانب سے وانڈرز وکٹ دکھائی گئی،ذرائع کا کہنا ہے کہ وانڈرز وکٹ معیار کے مطابق نہ ہوئی تو اس سٹیڈیم پر 4 سال کی پابندی لگ سکتی ہے۔یاد رہے کہ پاکستان اور جنوبی افریقہ کے درمیان تیسرا اور آخری ٹیسٹ 11 سے 15 جنوری تک جوہانسبرگ کھیلا جائے گا، اس کے بعد دونوں ٹیموں کے در میان ون ڈے انٹرنیشنل سیریز کا پہلا میچ 19 جنوری، دوسرا میچ 22 جنوری، تیسرا میچ 25 جنوری، چوتھا میچ 27 جنوری جب کہ پانچواں اور آخری میچ 30 جنوری کو کھیلا جائے گا، پاکستان اور جنوبی افریقہ کے درمیان پہلا ٹی ٹونٹی میچ یکم فروری، دوسرا میچ 3 فروری جب کہ تیسرا اور آخری میچ 6 فروری کو کھیلا جائے گا۔