دوسرے قائد اعظم بین الصوبائی گیمز ,سندھ کی ٹیموں نے مینز اینڈ ویمنز نیٹ بال ایونٹس میں سونے کے تمغے جیت لئے

اسلام آباد (سپورٹس ورلڈ نیوز)پاکستان سپورٹس بورڈ کے زیر اہتمام دوسرے قائد اعظم بین الصوبائی گیمز میں سندھ کی ٹیموں نے مینز اینڈ ویمنز نیٹ بال ایونٹس میں سونے کے تمغے جیت لئے، مینز ایونٹ میں خیبرپختونخوا نے دونوں ایونٹس میں کانسی کے تمغے حاصل کئے۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان سپورٹس کمپلیکس اسلام آباد میں جاری گیمز میں جمعرات کو کھیلے گئے مینز نیٹ بال ایونٹ کے فائنل میں سندھ کی ٹیم نے شاندار کھیل پیش کرتے ہوئے پنجاب کو 14 کے مقابلے میں 20 گولز سے ہرا کر ٹائٹل اپنے نام کیا اور اس کے ساتھ ہی سونے کا تمغہ جیتنے کا اعزاز بھی پایا، تیسری پوزیشن کیلئے کھیلے گئے میچ میں خیبرپختونخوا نے بلوچستان کو 19-13 گولز سے ہرا کر کانسی کا تمغہ جیتا، دوسری جانب ویمنز نیٹ بال ایونٹ کے فائنل میں سندھ کی ویمن ٹیم نے عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے پنجاب ویمن کو زبردست مقابلے کے بعد 9-7 گولز سے شکست دے کر سونے کا تمغہ اپنے نام کیا، تیسری پوزیشن کے میچ میں خیبرپختونخوا ویمن نے اسلام آباد ویمن کو 12-9 گولز سے زیر کر کے کانسی کا تمغہ جیتا۔ میچ کے بعد سندھ کی مینز اینڈ ویمنز ٹیموں کے کپتانوں عبداللہ اور یسریٰ شعیب نے اے پی پی سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا ہے کہ پاکستان نیٹ بال فیڈریشن (پی این ایف) ملک میں کھیل کی ترقی و فروغ کیلئے کوشاں ہے اور وہ اس سلسلے میں انتھک محنت کر رہی ہے، انٹرنیشنل سطح پر بھی ہماری قومی مینز ٹیم کی کارکردگی تسلی بخش ہے اور اس نے گزشتہ ایشین چیمپئن شپ میں چاندی کا تمغہ جیتا تھا، ہمیں پوری امید کہ آئندہ ایشین چیمپئن شپ میں ہماری ٹیم سونے کا تمغہ جیت لے گی، یسریٰ شعیب نے بھی فیڈریشن کے صدر مدثر آرائیں کی کھیل کے فروغ کیلئے کوششوں کو سراہا، انہوں نے کہا کہ فیڈریشن نے اکیڈمیز اوپن کی ہیں جس سے ہمیں پریکٹس کا موقع ملتا ہے، انہوں نے کہا کہ اگر کھلاڑی خوب محنت کریں تو ہماری ویمنز ٹیم بھی انٹرنیشنل سطح پر ملک و قوم کا نام روشن کر سکتی ہے۔ اس موقع پر کیپٹن (ر) ظفر اقبال اعوان پاکستان نیٹ بال فیڈریشن کے چیئرمین، مدثر آرائیں صدر، محمد ریاض سیکرٹری، ملک سلیم نائب صدر، کرنل (ر) غلام مرتضیٰ اسلام آباد نیٹ بال ایسوسی ایشن کے صدر، نائب صدر ثمین، اسلام آباد سپورٹس ویلفیئر ایسوسی ایشن کی چیئرپرسن کلثو م احمد بھی اس موقع پر موجود تھیں۔