اتھلیٹکس : فیصل آباد پاکستان میں اتھلیٹکس کی سب سے بڑی نرسری ہے ,پاکستان میں کسی دوسرے شہر اور ضلع میں اتھلیٹکس پراتنا کام نہیں ہو رہا :اولمپئین بشیر ڈوگر

فیصل آباد (سپورٹس ورلڈ نیوز) اولمپئین بشیر ڈوگر نے کہا ہے کہ فیصل آباد پاکستان میں اتھلیٹکس کی سب سے بڑی نرسری ہے جس نے پاکستان کو درجنوں نہیں سینکڑوں مرد اور خواتین اتھلیٹس دئیے ہیں جنہوں نے نہ صرف ملک میں اپنے شہر اور ضلع کا نام روشن کیا ہے بلکہ عالمی سطح پر بھی پاکستان کی نمائندگی کی اور پاکستان کا نام روشن کیا ہے وہ آج یہاں فیصل آباد میں سپورٹس ورلڈ پی کے ڈاٹ کام سے گفتگو کر رہے تھے سابق اولپمپئین اور موجودہ قومی کوچ بشیر ڈوگر کا کہنا تھا انہیں یہ فخر حاصل ہے کہ انہوں نے نہ صرف بطور اتھلیٹ اپنے ضلع اور اپنے ادارہ پاکستان واپڈا کا ملک میں نام سر بلند کیا بلکہ اولمپکس میں پاکستان کی نمائندگی کرنے کا اعزاز حاصل کیا۔اور اب وہ اپنے مقامی ساتھوں کے ساتھ ملکر اپنی مدد آپ کے تحت فیصل آباد میں بچوں اور بچیوں کو بطور کوچ تربیت دے رہے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ وہ اور انکے ساتھ رانا سلیم و دیگر ساتھی اس اکیڈمی کو اپنے وسائل سے چلاتے ہیں اور نہ صرف یہ کہ بلکہ وہ سال میں کم از کم دو بار فیصل آباد کی سطح پر اور ایک بار صوبائی سطح کے ایونٹ کا انعقاد کر کے اتھلیٹکس کے فروغ میں بنا کسی لالچ کے حصہ ڈالتے ہیں۔ اولمپین بشیر ڈوگر کا کہنا تھا کہ فیصل آاباد ڈویثزن کی خوش قسمتی ہے کہ اسے رانا حماد جیسا اتھلیٹکس لور سپورٹس آفیسر میسر ہے جو اتھلیٹکس کے ایونٹس کے انعقاد کے سلسلہ میں انکی بھر پور مدد کرتا ہے انہوں نے بتایا کہ رانا حماد ہی کی مدد اور تعاون سے گذشتہ دنوں فیصل آباد میں انٹر ڈویثرنل اتھلیٹکس چیمپین شپ منعقد کرائی تھی . جسکے مہمان خصوصی صوبائی وزیر رانا ثناء اللہ تھے۔

بشیر ڈوگر کا کہنا تھا کہ پاکستان میں اتھلیٹکس پر کسی دوسرے شہر اور ضلع میں اتنا کام نہیں ہو رہا جیتنا فیصل آباد میں ہو رہا ہے جسکا سہرا یہاں کے سابق ایتھلیٹس کے سر ہے جو اپنی مدد آپ کے تخت کام کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہماری اتھلیٹکس فیڈریشن کے سر براہ جرل (ر) اکرم ساہی سے استدعا ہو گی کہ وہ وقت نکال کر فیصل آباد میں اتھلیٹکس کے فروغ کے لئے کام کرنے والوں کی اکیڈ میز کا دورہ کریں اور انکی حوصلہ افزائی کریں۔ انکی جانب سے اخلاقی حوصلہ افزائی سے فیصل آباد میں اتھلیٹکس کے لئے کام کرنے والوں کے حوصلے مذید بڑھیں گے اور وہ پہلے سے بھی زیادہ محنت اورلگن کے ساتھ کھیل کی ترقی کے لئے کام کریں گے۔