قومی کھیل ہاکی کو قومی یکجہتی کی اشد ضرورت ہے….ایم وقاص شیخ کے قلم سے…

لاہور(اسپورٹس ورلڈ نیوز-ایم وقاص شیخ) پاکستان ہاکی جو کہ عرصہ دراز سے عالمی رینکنگ میں بدستور گمنامی کی طرف جارہی تھی.جس کی بہت ساری وجوھات تھیں ان میں ایک وجہ ناقص کوچنگ بھی تھی.ہماری ہاکی ٹیم پر بے شمار تجربات آزمائے گئے لیکن مجال ہے ہماری ٹیم کی پرفارمنس بہتر ہوسکے.اسی دوران پی ایچ ایف پریذیڈنٹ بریگیڈیئر ر خالد سجاد کھوکھر اور سیکریٹری شہباز احمد سینئر نے پاکستان ہاکی کی کمان سنبھالی تو فنڈز کی کمی اور کھلاڑیوں کی ناقص پرفامنس جیسے مسائل کا انبار سامنے کھڑا تھا.بریگیڈیئر ر سجاد خالد کھوکھر اور سیکریٹری شہباز احمد سینئر نے ہاکی کو اسکا کھویا ہوا وقار واپس دلانے کا بیڑہ اٹھایا.

پاکستان ہاکی فیڈریشن کے سامنے سب سے بڑا چیلنج بین الاقوامی ایونٹس کی پاکستان میں بحالی تھی.یہ ایک ایسا چیلنج تھا جو موجودہ ملکی حالات میں نہایت مشکل تھا.جب ہمت مرداں ہو تو مدد خدا خود ہی مل جاتی ہے.11 غیر ملکی گول کیپرز کو پاکستان مدعو کیا گیا.مزکورہ غیر ملکی گول کیپرز کی پاکستان آمد سے دیگر غیر ملکی کھلاڑیوں میں پاکستان آنے کاحوصلہ پیدا ہوا.مگر اس دوران سازشی عناصر بدستور پاکستان ہاکی کو زبوں حالی کی طرف دھکیلنے میں مصروف عمل رہے.پی ایچ ایف کو سوشل,پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کے زریعے بے جا تنقید کا نشانہ بنایا گیا.مختلف الزامات لگائے گئے جو کہ بعد ازاں غلط ثابت ہوئے.پی ایچ ایف سیکریٹری شہباز احمد سینئر پر عزم رہے بالآخر ورلڈ الیون کا پاکستان میں کامیاب دورہ منعقد کرواکر ناممکن کو ممکن کر دکھایا.ناقدین بھی تعریف کرنے لگے.یہی نہیں ھال آف فیم کے زریعے پاکستانی و غیر ملکی لیجنڈز کو خراج تحسین پیش کرکے ایک نئی تاریخ رقم کی.مزکورہ دورہ ورلڈ الیون سے جہان بین الاقوامی ہاکی پاکستان میں زندہ کی وہیں دیگر کھیلوں کیلئے بھی پاکستان میں راہ ہموار ہوئی.اس سلسلے میں حکومتی اور عسکری تعاون قابل دید تھا.


پاکستان ہاکی کی بہتری کیلئے سب سے بڑا چیلنج کوچنگ تھا جس کیلئے نہایت سوچ بچار کے بعد پاکستان ہاکی فیڈریشن کے زیر اہتمام گول کیپنگ کے معیار کو بہتر بنانے کیلئے ساؤتھ افریقن گول کیپر کوچ ریسی پائیٹرس کی سربراہی میں کیمپ لگایا گیا جس میں پاکستان بھر سے مین و وومن گول کیپرز کو جدید ٹیکنیک پر مبنی گول کیپنگ ٹریننگ دی گئی.مزکورہ ٹریننگ سے پاکستانی گول کیپرز کو بین الاقوامی سطح کی ٹیکنیک سیکھنے کو ملیں.

پاکستان سینئر ہاکی ٹیم کی کوچنگ کا مسئلہ جو کہ انتہائی گھمبیر ہوچکا تھا.کامن ویلتھ جیسے گیمز چیلنج بن کر سامنے کھڑے تھے. اسکے لئے نہایت سوچ بچار کے بعد پی ایچ ایف نے ہالینڈ سے تعلق رکھنے والے سینئر کوچ رویلمنٹ اولٹمنس کی خدمات حاصل کیں.جو کہ کراچی کے عبدالستار ایدھی ہاکی اسٹیڈیم میں پوری توجہ کے ساتھ قومی ٹیم کی کوچنگ کررہے ہیں.یہ حقیقت ہے کوچ ویلمنٹ اولٹمنس کے پاس الا دین کا چراغ تو نہیں ہے لیکن امید ہے وہ ٹیم کی بہترین پرفارمنس کیلئے ہر ممکن کوشش کریں گے.تاکہ ہمارے قومی ہیرو بین الاقوامی سطح پر پاکستان کو اسکا کھویا ہوا مقام واپس دلاسکیں.