پاکستان رگبی کے کھلاڑی اور ٹیم جنز کے اسٹار فلینکر راحیل قریشی انجری کے باعث اسکواڈ سے باہر، گھٹنے کی سرجری کے بعد اگلے سیزن میں واپسی متوقع۔

اسلام آباد (وفا عباس ارمانی)  اسلام آباد رگبی فٹبال کلب کی ٹیم جنز سے شہرت حاصل کرنے والے پاکستان رگبی ٹیم کے کھلاڑی راحیل قریشی کو فی الحال میدان سے باہر رہنا ہوگا جس کی وجہ ان کے گھٹنے کو لگنے والی چوٹ ہے۔ نمبر سات جرسی پہنے اسٹار فلینکر کو یہ انجری اس وقت پیش آئی جب حال ہی میں ختم ہونے والے لیگ میچز میں جنز کی ٹیم کو روایتی حریف لاہور رگبی اسکواڈ کا سامنا تھا۔ میچ ویڈیو دیکھنے سے بخوبی اندازہ ہوتا ہے کہ مخالف ٹیم کے کھلاڑی کی جانب سے شولڈر چارج کے بعد فلینکر قریشی توازن کھونے کے باعث گرے تاہم انجری انھیں گرنے سے قبل پیش آچکی تھی، فزیشن اور رگبی آفیشلز کے بقول کھلاڑی کا سارا وزن انکے اسی ساکت گھٹنے پر پڑا جس کو چوٹ آئی۔ تاہم اس ساری صورتحال کے بعد کھلاڑی کو فوری طبی امداد فراہم کی گئی لیکن اب راحیل قریشی کو سرجری کے پراسس سے گذرنا ہوگا۔ اسپورٹس ورلڈ پاکستان کو دیئے گئے اپنے انٹرویو میں فلینکر قریشی کا کہنا تھا کہ اگرچہ رگبی کے کھیل میں چوٹ لگنے کا امکان کھلاڑی کے زہن میں ہوتا ہے تاہم چوٹ لگنے کے بعد میدان سے باہر رہنے والا دورانیہ زیادہ تکلیف دہ ہوتا ہے کیونکہ جس طرح آپ کی پوری ٹیم آپکی کمی کو محسوس کررہی ہوتی ہے اسی طرح خود انجرڈ کھلاڑی کو بھی یہ احساس ہوتا ہے کہ وہ کب دوبارہ سے ٹھیک ہوکر اپنے اسکواڈ کے شانہ بشانہ کھڑا ہوسکتا ہے۔ راحیل قریشی اسلام آباد جنز اسکواڈ کا مستقل حصہ ہیں اور زیادہ تر فلینکر کی پوزیشن پر اپنے کھیل کا مظاہرہ کرتے ہیں لیکن اس کے ساتھ ساتھ پاکستان کی قومی رگبی ٹیم کا بھی حصہ ہیں اور اندرون و بیرون ملک بہت سی ٹیموں سے نبرد آزما ہوچکے ہیں۔ حالیہ انجری کے باعث اندازاً انھیں کچھ ماہ کے لئے کھیلنے سے دور رہنا پڑے گا جس کے باعث آگے آنے والے ایونٹس میں ٹیم جنز انکی کمی کو محسوس کرے گی۔ یہاں یہ بات بھی یاد رکھی جائے کہ راحیل قریشی اکیلے ہی رگبی کے کھیل سے نہیں جڑے بلکہ انکے دو بڑے بھائی آفتاب قریشی اور رومیل قریشی بھی پاکستان رگبی ٹیم کے اہم کھلاڑی ہیں اور اپنی ہوم ٹیم جنز کے ساتھ بھی کئی ممالک کے رگبی گراونڈز میں پاکستان کا پرچم بلند کرچکے ہیں۔