کو ئٹہ ۔حیدرآباد۔ اوکاڑہ اور کراچی میں فٹبال فیملی کے سینکڑوں افراد کاوفاقی حکومت کے خلاف اور فیصل صالح حیات کے حق میں مظاہرے، ٹائروں کو آگ لگا کر ٹریفک بلاک کر دی 

کو ئٹہ ۔حیدرآباد۔ اوکاڑہ (سپورٹس ورلڈ نیوز) فیفا کی جانب سے پاکستان فٹبال فیڈریشن کی معطلی کے فیصلہ کے خلاف آج اتوار کو ملک بھر کے محتلیف شہروں میں فٹبال کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے ہزاروں کھلاڑیوں آفیشلز اور فٹبال فینز نے احتجاجی فیفا کے فیصلے۔ حکومت پاکستان کی جانب سے فٹبال کے معاملات میں مداخلت اور پی ایف ایف کے صدر فیصل صالح حیات کے خلاف حکمران جماعت کی جانب سے کی جانے والی انتقامی کاروائیوں کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔ تفصیلات کے مطابق اس ضمن میں سندھ فٹبال ایسوسی ایشن کی جانب سے حیدر آباد میں حاجی محمد اعظم خان کی قیادت میں حید آباد پریس کلب کے سامنے۔ کوئٹہ میں بلوچستان فٹبال ایسوسی ایشن کی جانب سے حاجی سعید تاکو سیکر ٹری بلوچستان ٖفٹبال ایسوسی ایشن کی قیادت میں کو ئٹہ میں۔

اوکاڑہ میں جنرل سیکر ٹری اوکاڑہ فٹبال ایسوسی ایشن فقیر محمد کی قیادت میں احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔ ان مظاہروں میں شریک افراد نے اپنے ہاتھوں میں پلے کارڈ اُٹھا رکھے تھے جن میں حکومت کی جانب سے پی ایف ایف کے معاملات میں مداخلت کے خلاف۔ کیپٹن صفدر کے خلاف اور پی ایف ایف ہاوس پر قبضہ کے خلاف نعرے درج تھے ۔ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مظاہروں کی قیادت کرنے والے راہنماوں نے وفاقی حکومت سے فی الفور پی ایف یاف ہاوس کا قبضہ چھڑوانے اور پی ایف ایف کے اکاونٹس پی ایف ایف کے حقیقی صدر فیصل صالح حیات کے حوالے کر نے کا مطالبہ کیا۔  حکومت کے خلاف اور فیصل صالح کے حق میں مظاہرہ کرنے والے مظاہرین میں فٹبال کے کھلاڑیوں ۔آفیشلز اور ججز ریفریز کی ایک بڑی تعداد بھی شامل تھی۔ اس مو قع پر مظاہرین کی جانب سے سڑکوں پر ٹائروں کو آگ لگا کر ٹریفک بھی بلاک رکھی گئی اور حکومت کے خلاف اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا گیا۔