کھیلوں میں بھارتی جارحیت کے باوجود بین الاقوامی کھلا ڑیوں کی پاکستان آمد : وقاص شیخ کے قلم سے

ہاکی. پاکستان جو کہ کھیلوں کے حوالے سے پوری دنیا میں ممتاز حیثیت رکھتا ہے.ماضی میں پاکستان متعدد کھیلوں میں چیمپیئن رہا ہے.جس میں ہاکی ,کرکٹ,اسکوائش اور اسنوکر سمیت دیگر کھیل شامل ہیں.پاکستان نے دنیائے اسپورٹس کو لیجنڈز دیئے جنہوں نے پوری دنیا میں پاکستان کا پرچم بلند رکھا.پاکستان کا ازلی دشمن بھارت نے ہمیشہ سے ہر سطح پر پاکستان کے خلاف سازشیں کیں ہیں.جس کا پاکستان کو ناقابل تلافی نقصان اٹھانا پڑا ہے.نقصان اٹھانے کی اصل وجہ حکمرانوں کی جانب سے بھارت کو موثر جواب نہ دینا بھی ہے.جس طرح بھارت نے پاکستان کو دیگر شعبوں میں اپنی مکروہ عزائم کے زریعے نقصان پہنچایا وہیں پاکستان میں کھیلوں کے میدان بھی بھارتی سازشوں کی وجہ سے ویران ہوگئے.چاہے سری لنکا کرکٹ ٹیم پر حملہ ہو یا کرکٹ کی دنیا میں بگ تھری کی سازش ہو.یا پھر ہاکی کے میدان میں پاکستان کو نیچا دکھانے کی سازش ہو.بھارت نے ہمیشہ اپنے مزموم مقاصد کے حصول کیلئے گھناؤنی سازشیں کیں ہیں. ایک طرف بھارت نے پاکستان دشمنی کی بناء پر پاکستان کیساتھ کسی بھی کھیل کی سیریز کھیلنے سے انکار کیا تو دوسری جانب کرکٹ اور ہاکی کے انٹر نیشنل ایونٹس میں پاکستان کے ساتھ کھیلا بھی..یا پھر کہہ سکتے ہیں تھوک کر چاٹا ہے. بھارت کے اس دوہرے معیار سے ہوری دنیا آشنا ہوچکی ہے.گزشتہ چند ماہ سے بین الاقوامی کھلاڑی جس محفوظ انداز میں پاکستان کا رخ کررہے ہیں یہ ایک مثالی اور پاکستان کو سیکوریٹی رسک کہنے والوں کے منہ پر تماچہ ہے..گزشتہ ماہ قبل پی ایس ایل کا فائنل لاہور میں منعقد ہوا جو کہ کامیاب ایونٹ رہا جس میں بین الاقوامی کھلاڑیوں نے بے خوف و خطر اپنے کھیل کا مظاہرہ کیا اور پوری دنیا کو امن کا پیغام دیا

دیگر ممالک کی طرح پاکستانی بھی کھیلوں سے والہانہ محبت رکھتے ہیں.پی ایس ایل میں بین الاقوامی کھلاڑیوں نے میڈیا کے سامنے اقرار کیا کہ پاکستان کھیلوں کے لحاظ سے محفوظ ملک ہے .بعد ازاں ڈبلیو ڈبلیو ای سے تعلق رکھنے والے مشہور زمانہ ریسلرز نے کراچی , لاہور اور اسلام آباد کا رخ کیا وہ بھی اپنی مثال آپ تھا مزکورہ ایونٹ میں بڑا کردار پاکستانی نژاد ریسلر بادشاہ خان کا تھا .جنہوں نے پاکستان میں بین الاقوامی کھیلوں کے حوالے سے زبردست پیغام پہنچایا.ڈبلیو ڈبلیو ای کے مزکورہ ایونٹ کو عوام میں بے حد پزیرائی حاصل ہوئی.شائقین ریسلنگ کا جوش و جزبہ قابل دید تھا.غیر ملکی ریسلرز نے پاکستانیوں کی محبت کو بے انتہا سراہا اور نہایت خوشی کا اظہار کیا اور پاکستان کو محفوظ ملک قرار دیا. جہاں بین الاقوامی کھلاڑی با آسانی آسکتے ہیں اور پاکستانیوں کی محبتیں سمیٹ سکتے ہیں. جو کہ پاکستانیوں کے لئے قابل فخر تھا. اسکے بعد گزشتہ ہفتے قبل انٹر نیشنل فٹ بال سپر اسٹار رونالڈینیو اپنے دیگر انٹر نیشنل فٹبالرز کے ہمراہ پاکستان کا رخ کیا جہاں رونالڈینیوں سیون اور ککز سیون کے درمیان دلچسپ فٹبال میچ کھیلا گیا جو کہ ترتیب وار کراچی پھر لاہور میں منعقد ہوا.فٹبال جسے پاکستان میں مقبول تریب کھیل تصور کیا جاتا ہے. میچ ٹکٹ ریٹ مہنگے ہونے کے باوجود بڑی تعداد نے انٹر نیشنل فٹبالرز کو کراچی اور لاہور میں ان ایکشن دیکھا.جو کہ پاکستان میں کھیلوں کی بحالی کے لئے واضع کامیابی اور پیغام تھا کہ ہاکستان بھی انٹرنیشنل مقابلوں کے لئے انٹرنیشنل کھلاڑیوں کیلئے محفوظ ترین ملک ہے.  شائقین ہاکی کو اب اپنی باری کا انتظار ہے کب پاکستان میں ہاکی لیگ ک اہتمام ہو کب انٹرنیشنل ہاکی کھلاڑیوں کو پاکستانی عوام اپنے ہاکی گراؤنڈ میں ایکشن میں دیکھیں .ہاکی جو کہ قومی کھیل بھی ہے حکومتی سطح پر عدم دلچسپی نے قومی کھیل کو تباہی کے دہانے پر کھڑا کردیا ہے.گزشتہ دنوں سے پی ایچ ایف کی جانب سے ہاکی کو بچانے کیلئے صلاح مشورے جاری ہیں انہیں چائیے جلد از جلد ہاکی لیگ کا اعلان کریں. جس میں بین الاقوامی کھلاڑیوں کو پاکستان مدعو کریں.پاکستان میں ہاکی کا بے انتہا ٹیلنٹ موجود ہے اسے آگے لانے کی ضرورت ہے.انٹر نیشنل ایونٹس سے مقامی کھلاڑیو ں میں حوصلہ بڑھتا ہے جس سے وہ پاکستان کیلئے بہتر کھیل پیش کرسکتے ہیں.کھیلوں میں بھارتی جارحیت کا واحد علاج انٹرنیشنل کھیلوں کے ایونٹس کی پاکستان میں بحالی ہے. بھارت نے ہاکی لیگ میں کھیلنے سے انکار کردیا جو کہ ہٹ دھرمی اور کھلے عام بدمعاشی ہے. انٹر نیشنل اولمپک کمیٹی کو چائیے بھارت کی جانب سے کھیلوں میں سیاست شامل کرنے کا سختی سے نوٹس لے تاکہ کھیلوں سے سیاست کو دور رکھا جائے اسی میں کھیل اور کھلاڑیوں کی بہتری ہے.