فیصل صالح حیات آج لاہور میں پریس کانفرنس کر کے12دسمبر کو سُپریم کورٹ کے فیصلہ کی روشنی میں ہونے والے پی ایف ایف کے انتخابات کے ممکنہ بائیکاٹ کا اعلان کریں گے

اسلام آباد (سپورٹس ورلڈ نیوز) پاکستان فٹبال فیڈریشن کے سابق سربراہ فیصل صالح حیات آج لاہور میں اپنے حمایتیون کے ہمراہ لاہور میں پریس کانفرنس کر کے12دسمبر کو سُپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلہ کی روشنی میں ہونے والے پی ایف ایف کے انتخابات کے ممکنہ بائیکاٹ کا اعلان کریں گے۔اور اس حوالے سے میڈیاکے سامنے فیفا کی جانب سے بھجوائے جانے والے اس خط کو رکھیں گے جس میں فیفا کی جانب سے ایکبار پھر موقف اختیار کیا گیا ہے کہ وہ تھرڈ پارٹی مداخلت کے باعث پی ایف ایف کے ہونے والے حالیہ انتخابات کو نہیں مانیں گے اور فیصل صالح حیات ہی انکی نظروں میں پی ایف ایف اکے صدر ہیں اور رہیں گے۔ فیصل صالح حیات کے قریبی ذرائع کے مطابق انہیں یہ خط تین روز فیفا سے موصول ہوا تھا۔
ادھر انکے مخالف دونوں دھڑوں ملک عامر ڈوگر گروپ اور ظاہر شاہ گروپس کا موقف ہے کہ فیفا سے یہ خط فرمائش کر کے لکھوایا گیا ہے تاکہ ریاست پاکستان کی سب سے بڑے عدالت سُپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلہ کو غیر موثر کیا جاسکے اوراس کا مذاق اُڑایا جا سکے۔ دونوں دھڑوں کے ذمہ داران کا تو یہاں تک کہنا ہے کہ فیصل صالح حیات نے نہ صرف فرمائش کر کے فیفا حکام سے سپورٹ مانگی اور لیٹر منگوایا ہے بلکہ انہیں اطلاعات ہیں کہ فیصل صالح حیات کی جانب سے فیفا سے یہاں تک کہا جا چکا ہے کہ فیفا چاہے تو پاکستان فٹبالرز اور فٹبال کے کھیل کے لئے بھجوائی جانے والی امداد کو واپس منگو الے تاکہ اگر سُپریم کورٹ کے فیصلہ کی روشنی میں الیکشن ہوجاتے ہیں اور انہیں اسکے حکم کے تحت پی ایف ایف کے دفاتر کو خالی کرنا اور اکاونٹس نو منتحب عہدیداران کے حوالے کرنا پڑتے ہیں تو، نئے آنے والے لوگوں کے پاس فٹبال کے معاملات چلانے کے لئے کچھ موجود نہ ہو۔انکا کہنا ہے اگر کل کلاں کو ایسا ثابت ہوگیا تو وہ اس معاملہ کو ایسے ہی نہیں چھوڑیں گے بلکہ پاکستان کے فٹبالر، فٹبال اور ملکی و قوم کے مفاد کے خلاف انکی اس کاروائی پر انکے خلاف قانونی چارہ جوئی بھی کریں گے۔
ذرائع سے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ فیصل صالح حیات چند روز قبل پاکستان پیپلز پاڑٹی کے راہنما آصف علی زرداری سے مدد مانگتے ہوئے کے پی کے سے تعلق رکھنے والے اپنے ایک حریف ظاہر شا جنکا تعلق پیپلز پارٹی سے ہے بھی مدد مانگی تھی، جسپر آصف علی زرداری نے ظاہر شاہ سے رابطہ بھی کیا گیا تھا مگر انہوں ظاہر شاہ نے اس حوالے سے معذرت کر لی تھی جس کے بعد فیصل صالح حیات اپنی کامیابی کے حوالے سے مکمل طور پر مایوس ہوچکے ہیں،شائد یہی وجہ ہے کہ وہ اب فیفا کے خط کا سہارا لیکر الیکشنزکا ہی بائیکاٹ کرنے جا رہے ہیں۔ یہاں دلچسپ امر یہ ہے کہ نامنیشن پیپرز کی کاروائی کے آغاز سے قبل انکے نمائندوں نے سُپریم کورٹ آف پاکستان کے جانب سے نامزد کردہ ریٹرنگ آفیسر کے سامنے پیش ہو کر سارے انتخابی عمل میں شر کت کی اور اپنا موقف ریٹرنگ آفیسر کے سامنے رکھا،اور اپنا موقف ثابت کرنے میں نا کام رہے، مگر اب جب انہیں اس بات کا یقین ہو چلا ہے کہ وہ ہار رہے ہیں تو وہ نامنیشن پیپرز فائل کرنے کی بجائے فیفا کا لیٹر لےکر الیکشنز کا ممکنہ بائیکاٹ کرنے کا فیصلہ لینے جا رہے ہیں۔