تازہ ترین
بنیادی صفحہ / باڈی بلڈنگ / دومرتبہ کے قومی فزیک چمپین ، پشاورکےثاقب خان اپنی مجبوریوں کو شوق کےآڑے نہیں آنےدیتے ، اپنانام بنانےکیلئےپرعزم ہے

دومرتبہ کے قومی فزیک چمپین ، پشاورکےثاقب خان اپنی مجبوریوں کو شوق کےآڑے نہیں آنےدیتے ، اپنانام بنانےکیلئےپرعزم ہے

پشاور(سپورٹس ورلڈ نیوز . ملاقات:غنی الرحمن)پشاور کے مضافاتی علاقہ پخہ غلام کے رہائشی نوجوان ثاقب خان نے اپنی مجبوری کو شوق کے آڑے نہیں آنے دیا اور تمام رکاوٹوںاور مجبوریوں کے باوجودشاندار کاکردگی مظاہرہ کرتے ہوئے تن سازی کے کھیل میں ایک منفرد مقام بنادیاہے اوروہ اس شعبے میںاپنانام بنانے اور تاریخ رقم کرنے کیلئے پرعزم ہے۔ پشاور کی مقامی ورکشاپ میں کام کرنیوالا بیس سالہ نوجوان ثاقب خان جو ورکشاپ اور گھر کی ذمہ داریوں کے ساتھ ساتھ باڈی بلڈنگ کا شوق بھی پورا کر رہا ہے اور لاہور میںدو سال سے قومی پاکستان سطح پرمنعقدہ ہونیوالے مین فزیک کا چمپئن شپ اپنے نام کرچکے ہے۔تفصیلات کے مطابق پشاور کے نواحی علاقے پخہ غلام سے تعلق رکھنے والا20 سالہ کار مکینک ثاقب خان جو روزانہ صبح 9 سے شام پانچ بجے تک رامداس میں واقع ایک مقامی ورکشاپ میں کام کرتے ہوئے گاڑیوں کی مرمت میں مصروف رہتا ہے، تاہم اسے باڈی بلڈنگ کا بھی بہت شوق ہے۔ثاقب خان نے بتایاکہ وہ ورکشاپ سے شام کو فارغ ہونے کے بعد دلہ زاک روڈپر واقع جیم جم کا رخ کرتا ہے جہاں وہ اپنے کوچ اور مسٹر سائوتھ ایشین تن ساز اعجاز احمد سے ٹریننگ حاصل کرتے ہوئے سخت ورزش کرتا ہے اور انہی کی کاوشوں سے اوراپنی محنت کی بدولت وہ گزشتہ دو سالوں سے لاہور میںقومی سطح پر منعقد ہونیوالے پاکستان مین فزیک چمپئن شپ کی ٹائٹل اپنے نام کرچکے ہیں۔انہوںنے کہاکہ وہ یہ اعزازمسلسل دو مرتبہ جیتنے میں کامیاب ہوئے ہیں،تاہم ان شاندار کامیابیوں کے باوجودثاقب خان نے بھی حکومتی عدم دلچسپی کا رونا روتے ہوئے کہاکہ ان مقابلوں کیلئے تیاری میں کسی ادویات کا سہارانہیں لیابلکہ صرف اور صرف اپنی محنت اورکوچ کی مشورے کے مطابق خوراک اور ایکسر سائز سے جسم بنایااور یہی وجہ ہے کہ ججز نے انہیں اس ٹائٹل کے حقدارٹہرایا۔پولیس سے تعلق رکھنے والے سابق ساؤتھ ایشین چمپئن اعجاز احمد کے زیر نگرانی ٹریننگ لینے والے ثاقب خان اب قومی سطح پرکھیل رہا ہے، تاہم اس کے کوچ اعجازاحمدنے حکومت سے کھلاڑیوں کی سپانسر شپ کا مطالبہ کیا ہے۔کوچ اعجاز احمد خان نے بتایاکہ باڈی بلڈنگ کے ہونیوالے مقابلے میں حصہ لینے والے دیگر کھلاڑیوں کی نسبت ثاقب خان نے قومی سطح کی پوزیشن جلد ہی حاصل کر لی ہے اوروہ مستقبل میں بین الاقوامی سطح کے ہونیوالے مقابلوں میں پوزیشن بنانے کا خواہشمند ہے۔انہوںنے کہاکہ ثاقب خان نے اپنی غریبی اور مجبوری کو شوق کے آڑے نہیں آنے دیا اورتمام تر رکاوٹوں کے باوجودتن سازی کے شعبے میں قومی اور بین الاقوامی سطح پر اپنا نام بنانے اور تاریخ رقم کرنے کیلئے پرعزم ہے تاہم حکومت کی بھی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ ان جیسے باصلاحیت کھلاڑیوں کو سپانسرشپ دیں اور مقابلوں کیلئے تیاری پر ہونیوالے اخراجات کو برداشت کرے ۔