تازہ ترین
بنیادی صفحہ / سائیکلینگ / محمد شکیل پر پابندی یو سی آئی اور واڈا قوانین کے تحت لگائی گئی ، پسند نہ پسند کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا. واڈا لیبزعالمی قوانین اور قوائد کے تحت کام کرتی ہیں : پی سی ایف ترجمان

محمد شکیل پر پابندی یو سی آئی اور واڈا قوانین کے تحت لگائی گئی ، پسند نہ پسند کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا. واڈا لیبزعالمی قوانین اور قوائد کے تحت کام کرتی ہیں : پی سی ایف ترجمان

پشاور-15 مئی 2019 ( سپورٹس ورلڈ نیوز ) پاکستان سائیکلنگ فیڈریشن کا کہنا ہے کہ محمد شکیل پر پابندی یو سی آئی اور واڈا قوانین کے تحت لگائی گئی ہے اس میں کسی پسند نہ پسند کا کوئی تعلق نہیں ہے۔ ترجمان پی سی ایف کا کہنا تھا کہ محمد شکیل اس سے قبل 2014کی ایشین گیمز میں بھی ڈوپ ٹیسٹ مثبت آنے پرخواجہ ادریس نے دو سال کی پابندی لگائ جس پراس یہ دو سال کا سامنا کر چکے ہیں۔ ورلڈسائیکنگ فیڈریشن اور واڈا کے قوانین کے تحت نیشنل چیمپیئن شپ میں ٹاپ پوزیشن حاصل کرتنے والے سائیکلسٹ کے ڈوپ لیے گئے تھے جس کا رزلٹ پازیٹو آنے کے بعد پاکستان سائیکلنگ فیڈریشن نے قانون کے تحت ضابطہ اخلاق کی کارروائی مکمل کر کے سزا کا اعلان کیا ہے۔ ترجمان کا کہنا تھا کہ پاکستان سائیکلنگ فیڈریشن کبھی پسند نا پسند پر اپنے کھلاڑیوں کے خلاف کارروائی نہیں کرتا ہے۔ محمد شکیل کا یہ کہنا کہ خواجہ ادریس حیدر کے ساتھ تعلق کی بنا پر انتقامی کارروائی کا نشانہ بنایا گیا ہے تو اس میں کوئی حقیقت نہیں ہے۔ پاکستان میں واڈا کے نمائنوں نے انکے سیمیل لئے تھے پاکستان سپورٹس بورڈ کے ڈپٹی ڈی جی ڈاکٹر وقار جو پاکستان میں واڈا کے مشن کے ہیڈ بھی ہیں کی زیر نگرانی کھلاڑیوں کو ڈوپ سیمپل لیبارٹری میں بھجوائے گئے تھے جس پر فیڈریشن کے بھاری اخراجات بھی آئے۔ انہی ٹیسٹس میں محمد شکیل کا رزلٹ پازیٹیو آیاان عالمی لیبز سے نیائج کوئی بھی تبدیل نہیں کرواسکتا.