تازہ ترین
بنیادی صفحہ / جمناسٹک / پاکستان جمناسٹک فیڈریشن نے پاکستان و سندھ جمناسٹک کے صدر احمد علی راجپوت کو عہدے سے فارغ کرتے ہوئے چار سالہ پابندی عائد کردی.

پاکستان جمناسٹک فیڈریشن نے پاکستان و سندھ جمناسٹک کے صدر احمد علی راجپوت کو عہدے سے فارغ کرتے ہوئے چار سالہ پابندی عائد کردی.

لاہور:11جولائی 2019(سپورٹس ورلڈ نیوز) پاکستان جمناسٹک فیڈریشن نے پاکستان و سندھ جمناسٹک ایسوسی ایشن کے صدر اور سندھ اولمپک ایسوسی ایشن کے سیکریٹری احمد علی راجپوت کو عہدے سے فارغ کرکے چار سالہ پابندی عائد کردی.تفصیلات کے مطابق عرصہ دراز سے سندھ اولمپک ایسوسی ایشن پر حکمرانی کرنے والے احمد علی راجپوت جنہوں نے پاکستان جمناسٹک فیڈریشن و سندھ جمناسٹک ایسوسی ایشن کی صدر کی حیثیت سے سندھ اولمپک میں سیکریٹری کے منصب ہر فائز ہیں. انہیں پاکستان جمناسٹک فیڈریشن کے سیکریٹری منظور حسین جعفری نے انکوائری کمیٹی کی رپورٹ آنے کے بعد عہدے سے فارغ کرتے ہوئے چار سالہ پابندی عائد کردی.

لیٹر کے مطابق احمد علی راجپوت جمناسٹک کے کسی بھی ڈسٹرکٹ,ریجنل,صوبائی,قومی یا بین الاقوامی ایونٹ میں نمائندگی نہیں کرسکیں گے.اس حوالے سے سینئر وائس پریذیڈنٹ پاکستان جمناسٹک فیڈریشن کی سر براہی میں ایگزیکٹیو کمیٹی کا اجلاس 19جون 2019 کو منعقد کیا گیا تھا. اجلاس میں پنجاب جمناسٹک ایسوسی ایشن کی جانب سے احمد علی راجپوت کے خلاف تحریری شکایات کے بعد انکوائری رپورٹ کی روشنی میں پابندی عائد کی گئی.پنجاب جمناسٹک ایسوسی ایشن نے تحریری شکایت میں موقف اپنایا تھا کہ گزشتہ سال حیدر آباد میں ہونے والی نیشنل جمناسٹک چیمپیئن شپ میں پنجاب کی جانب سے جعلی انڈر 18 گرلز کی ٹیم شرکت کرائی گئی.اسکے علاوہ دیگر شکایات کی روشنی میں انکوائری کمیٹی نے یہ فیصلہ سنایا.احمد علی راجپوت جو کہ سندھ اولمپک ایسوس ایشن کے سیکریٹری بھی ہیں.ان پر گزشتہ سندھ گیمز میں سندھ گیمز آرگنائزنگ کمیٹی کے وائس چیئر مین ایاز موتی والا کی جانب سے کرپشن کے الزامات بھی عائد کئے گئے تھے.اب دیکھنا یہ ہے پاکستان جمناسٹک فیڈریشن کے فیصلے کے بعد احمد علی راجپوت کی سندھ اولمپک ایسوسی ایشن میں بحیثیت سیکریٹری کیا قانونی حیثیت رہ جاتی ہے.اس حوالے سے پاکستان اولمپیک ایسوسی ایشن احمد علی راجپوت کے مستقبل کا کیا فیصلہ سناتی ہے.