تازہ ترین
بنیادی صفحہ / ہاکی / 33ویں نیشنل گیمزمیں سندھ ہاکی ٹیم کی شرکت کا معاملہ: پی ایچ ایف سیکریٹری کا پارہ ہائی..غیر الحاق شدہ سندھ ہاکی ٹیم کی شرکت کی بناء پر آفیشلز وکھلاڑیوں کے اوپر دو سال یا اس سے زائد پابندی عائد کرنے کا اعلان…!

33ویں نیشنل گیمزمیں سندھ ہاکی ٹیم کی شرکت کا معاملہ: پی ایچ ایف سیکریٹری کا پارہ ہائی..غیر الحاق شدہ سندھ ہاکی ٹیم کی شرکت کی بناء پر آفیشلز وکھلاڑیوں کے اوپر دو سال یا اس سے زائد پابندی عائد کرنے کا اعلان…!

لاہور:07نومبر19(سپورٹس ورلڈ نیوز) 33ویں نیشنل گیمزمیں سندھ ہاکی ٹیم کی شرکت کا معاملہ: پی ایچ ایف سیکریٹری کا پارہ ہائی..غیر الحاق شدہ سندھ ہاکی ٹیم کی شرکت کی بناء پر آفیشلز وکھلاڑیوں کے اوپر دو سال یا اس سے زائد پابندی عائد کرنے کا اعلان…! تفصیلات مطابق پی ایچ ایف سیکریٹری آصف باجوہ نے بالآخر چپ کا روزہ توڑتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ 33 ویں نیشنل گیمز میں ہاکی ایونٹس میں صرف پی ایچ ایف سے الحاق شدہ یونٹس ہی حصہ لیں گے،غیر الحاق شدہ یونٹس کی ٹیموں اور آفیشلز کے خلاف آئین کے مطابق سخت تادیبی کارروائی کی جائیگی انہوں نے مزید کہا ہے کہ 33ویں نیشنل گیمز میں ہاکی کےمقابلوں میں پاکستان ہاکی فیڈریشن کے ملحقہ یونٹس کی ٹیمیں اور آفیشلز ہی شرکت کے اہل ہونگے. انہوں نے کہا کہ غیر الحاق شدہ یونٹس کی ٹیموں کی ایونٹ میں شمولیت کی کوشش پرٹیم کے کھلاڑیوں اور آفیشلز کے خلاف سخت تادیبی کارروائی کی جائے گی. انہوں نے کہا کہ ایسے تمام کھلاڑیوں اور آفیشلز کو جو کہ پاکستان ہاکی فیڈریشن کی جانب سے تسلیم شدہ اور ملحقہ یونٹس کا حصہ نہیں ہونگے قومی کھیلوں میں شرکت کے لئے نااہل تصور ہونگے اور انکے خلاف حسب آئین سخت تادیبی کارروائی بھی کی جائیگی. جس میں ان کھلاڑیوں اور آفیشلز کو دو سال یا زائد پابندی کا سامنا بھی کرنا پڑ سکتا ہے. انہوں نے کہا کہ قومی کھیل کا منتظم ادارہ کس فرد واحد یا نان سٹیٹ ایکٹرز کو اس تمام جمہوری عمل کو سبوتاژ کرنے کی اجازت ہرگز نہیں دے گا.واضع رہے سندھ اولمپک و بلوچستان اولمپک ایسوسی ایشن کی جانب سے متعدد کھیلوں کی ٹیمیں خودساختہ بنائی گئیں جس پر متعلقہ کھیلوں کے صوبائی سیکریٹریز کی جانب سے نظر انداز کرنے پر سخت ناراضگی کا اظہار کیا گیا.باآخر پی ایچ ایف کی جانب سے عین موقع بیان آنے کے بعد نیشنل گیمز میں شرکت کے حوالے سے سندھ و بلوچستان ہاکی ٹیموں کی پوزیشن واضع ہوسکی ہے.